277

PTI کے صحافیوں پرالزامات،PFUJنےملک گیراحتجاج کی دھمکی دیدی

اسلام آباد (خصوصی نامہ نگار) پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹس نے سابق وزیراعظم عمران خان کیخلاف تحریک عدم اعتماد میں معاونت کے حوالے سے صحافیوں پر لگائے گئے الزامات کے ثبوت مانگ لئے اور خبردار کیا ہے کہ ثبوت نہیں تو معافی مانگیں ورنہ ملک گیر مظاہروں کی کال دیدی جائیگی، راولپنڈی اسلام آباد یونین آف جرنلسٹس کے زیر اہتمام نیشنل پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا ،پی ایف یو جے نے صحافیوں پر لگنے والے الزامات، سوشل میڈیا پر تضحیک اورہراساں کرنے کی تحقیقات کیلئے سینئر صحافیوں پر مشتمل کمیٹی تشکیل دیدی ہے ، مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے پی ایف یوجے کے صدر شہزادہ ذوالفقار نے کہا کہ دنیا میں سیاست اخلاقیات کی بنیاد پر ہوتی ہے ہماری سیاسی جماعتیں خاص طورپر پی ٹی آئی اخلاق سے گر کر سیاست کرتی ہے، پی ٹی آئی نے الزام لگایا کہ صحافی پیسے لیتے ہیں، پی ٹی آئی تمام ثبوت ہمیں دیں ہم ان صحافیوں کیخلاف کاروائی کرینگے اگر آپ ثبوت فراہم نہ کر سکیں تو پھر قوم کے سامنے صحافیوں سے معافی مانگیں، سیکرٹری جنرل ناصر زیدی نے کہا کہ پی ٹی آئی کو وارننگ دیتا ہوں سوشل میڈیا پر صحافیوں کردارکشی بند کیجائے اور جمہوری رویہ اختیار کیاجائے ، آئین و قانون کو مانے اور اخلاقیات کے دائرے میں رہیں ، عمران خان صحافیوں کیخلاف سوشل میڈیا پر مہم بند کروائیں ، سابق صدر افضل بٹ نے کہا کہ عمران فارن فنڈنگ کے الزامات لگاتے ہیں سوشل میڈیا پر ہماری خواتین کیخلاف پرپیگنڈہ مہم چلاتے ہیں اگر آپکے پاس کسی صحافی کیخلاف ثبوت ہیں تو پی ایف یو جے کو دیں، آپ بغیر سوچھے سمجھے پلا ننگ کے تحت میڈیا کیخلاف مہم چلا رہے ہیں، جس کا مقصد صحافیوں کی شخصیت متاثر کرنا ہے آر آئی یو جے کے صدر عابد عباسی نے کہا کہ پی ٹی آئی والے پہلے صحافیوں پر پیسے لینے ، غیر ملکی فنڈنگ کا الزام لگاتے ہیں اور پھر سوشل میں پر صحافیوں کیخلاف پریگنڈہ مہم شروع کردیتےہیں اگر پی ٹی آئی والوں نے رویہ نا بدلا تو پھر اگر ضرورت محسوس ہوئی تو انکی مرمت تک بات پہنچ سکتی ہے، نیشنل پریس کلب کے صدر انور رضا نے کہا کہ پی ٹی آئی کیخلاف اقدامات کرنا پڑھیں گی ، وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب سے مطالبہ کرتےہیں کہ سوشل میڈیا ونگ کیخلاف تحقیقات کا آغاز کریں، آر آئی یو جے جنرل سیکرٹری طارق علی ورک نے کہا کہ ہم مائرہ عمران، نیئر علی اور عون شیرازی کیساتھ کھڑے ہیں آر آئی یو جے اپنے ممبران کو تنہا نہیں چھوڑیگی ، پی ٹی آئی کی حکومت میں صحافی انکو فل کوریج دیتے تھے تو کیا عمران خان اس وقت صحافیوں کی پیسے دیتے تھے جواب بےبنیاد الزامات لگا رہے ہیں ، اگر پی ٹی آئی نے اپنا رویہ درست نہ کیا تو پھر آئندہ کا احتجاج بنی گالا پر ہوگا، پریس کلب کے سیکرٹری خلیل احمد راجہ نے کہا کہ جس طرح مائرہ عمران اور نیئر علی کیخلاف ایک ٹی وی شو میں جھوٹے اور بےبنیاد الزامات لگائے گئے اس اینکر کو بھی وارننگ دیتا ہوں کہ وہ اس الزام کے ثبوت دیں، سابق صدر پریس کلب طارق چوہدری نےکہا ہم کسی سے نہیں ڈرتے اگر کسی نے صحافی خواتین کیخلاف سوشل میڈیا مہم بند نہ کی تو اسے بھرپور جواب دینگے ،عمران خان اپنی سوشل میڈیا ٹیم کو لگام دیں، آر آئی یو جے کے سابق صدر عامرسجادسید نے کہا کہ عمران خان حکومت کے سارھے تین سال کے دوران 10 سے 12 ہزار صحافی بیوزگار ہوئے ،کافی سارے صحافتی ادارے بھی بند ہوئے،پی ٹی آئی کی میڈیا کیخلاف پالیسی سے سب واقف ہیں ، پریس کلب کی فنانس سیکرٹری نیئر علی نے کہا کہ ہمارے خلاف سوشل میڈیا پر مہم چلائی گئی ، خواتین صحافیوں کیخلاف غلط بےبنیاد الزامات لگائے گئے ، ہم آپ سے سوال کرینگے اگر آپکے پاس جواب نہیں تو آپ معذرت کرلیں لیکن سوشل میڈیا پر صحافیوں کیخلاف مہم نہ چلایا کریں،پریس کلب کی نائب صدر مائرہ عمران نے کہا ہم سفارتخانوں میں کوریج کرنے جاتے ہیں، ہمارے خلاف ایک منظم مہم چلائی گئی ایک چینل پر پروگرام کروایا گیا، آر آئی یو جے کے سابق نائب صدر عون شیرازی نے کہا کہ اگر ہم سے سوال نہیں لینا تو پھر ہمیں کیوں بلاتے ہیں، عمران خان کی موجودگی میں شہباز گل نے مجھے ہراساں کیا، دھکے دئیے اور میرا گلا دبوچا، سوالات ہم کرتے رہینگے اگر آپ ہمارے خلاف سوشل میڈیا پر پروپیگنڈہ مہم چلائینگے تو ہم قلم سے جواب دیتے رہیں گے،مظاہرے میں نائب صدر آر آئی یو جے اظہار نیازی ،شاہد اجمل جوائنٹ سیکرٹریز ناصر خٹک،علمدار،ثوبیہ مشرف،عارف جنجوعہ، محمد حسنین، وسیم ستی و صحافیوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔
بشکریہ
روزنامہ جنگ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں