269

پولیس نوکری دلوانے کی آڑ میں غریب خاتون کو زبردستی بے آبروکرنے والے بااثر ملزم کے خلاف مقدمہ درج کرنے کی بجائے الٹا ملزم سے مل گئی

سمبڑیال(آن لائن)سمبڑیال پولیس نوکری دلوانے کی آڑ میں غریب خاتون کو زبردستی بے آبروکرنے والے بااثر ملزم کے خلاف مقدمہ درج کرنے کی بجائے الٹا ملزم سے مل گئی،نوٹوں کی چمک نے قانون قاعدے بھلا دیئے، متاثرہ خاتون میڈیکل رزلٹ کے باوجود 16روز بعد بھی روایتی تاخیر ی حربوں کے باعث مقدمہ در ج نہ ہوسکا، انصاف کے حصول کے لیے
ایس ایچ او سمبڑیال سمیت پولیس افسران کے پاس دربدر ہونے والی خاتون فوزیہ پرویزن کی وزیراعلیٰ پنجا ب حمزہ شہباز، آئی جی پنجاب پولیس، آرپی اوگوجرانوالہ، سے بااثر ملزم کے خلاف مقدمہ درج کرنے اورمقدمہ درج نہ کرنے والے پولیس افسران کے خلاف نوٹس لینے کا مطالبہ۔تفصیلات کے مطابق تھانہ سمبڑیال کے علاقہ الیوالی کی رہائشی خاتون فوزیہ پروین دختر منظور احمد نے صحافیوں کے آگے دہائی دیتے ہوئے کہا ہے کہ ڈیفنس روڈ محلہ سردا رپورہ سیالکوٹ کے رہائشی ملزم علی فیصل نے مجھے موبائل فون پر رابطہ کر کے نجی ہوٹل میں نوکری دلوانے کی آڑ میں مجھے نوکری کے متعلقہ کاغذات لینے کے بہانے میرے گھر میں آکر رات کو گن پوائنٹ پر زبردستی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالاکسی کو بتانے پر سنگین نتائج کی دھمکیاں دیتا ہوا فرار ہوگیابعدازاں میری طرف سے اپنے ساتھ ہونے والے ظلم اوراندرا ج مقدمہ کی درخواست تھانہ سمبڑیال پولیس کو دینے اورمیرے ساتھ زنابالجبر کا تصدیقی میڈیکل لیگل رزلٹ ہونے کے باوجود 16روز بعد بھی پولیس ملزم علی فیصل کو گرفتا ر نہیں کررہی اورنہ ہی اس کے خلاف مقدمہ درج کررہی ہے،متاثرہ خاتون فوزیہ پروین کا کہنا تھا کہ چونکہ ملزم بااثر پشت پناہی کا حامل اورپیسے والا ہے اس لیے پولیس نوٹوں کی چمک کے آگے بک چکی ہے اورایس ایچ او سمبڑیال سمیت متعلقہ افسران کے پاس 16روز سے خوارہونے چکر لگانے کے باوجود میر ا مقدمہ درج کرنے کی بجائے مجھے ذلیل وخوار کیا جارہا ہے، خاتون فوزیہ پروین نے وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز،آئی جی پولیس پنجاب راؤ سردار خاں،آرپی او گوجرانوالہ،ڈی پی اوسیالکوٹ سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں