420

فاضل الطب والجراحت کے چار سالہ کورس کے پہلے دو سال انٹرمیڈیٹ کے مساوی قرار IBCC اور قومی نصاب کونسل وفاقی وزارت تعلیم حکومت پاکستان کی جانب سے نوٹیفکیشن جاری

فاضل الطب والجراحت کے چار سالہ کورس کے پہلے دو سال انٹرمیڈیٹ کے مساوی قرار
IBCC اور قومی نصاب کونسل وفاقی وزارت تعلیم حکومت پاکستان کی جانب سے
فاضل الطب والجراحت کے سالِ اوّل اور سالِ دوم کو انٹرمیڈیٹ کے مساوی قرار دینے کا نوٹیفکیشن جاری-
پاکستان طبی کانفرنس تعلیم طب میں بہتری کے لیے روز اول سے کوشاں ہے اس مقصد کے لیے مختلف کاوشیں کی جاتی رہی ہیں- الحمدللہ ملک بھر میں پانچ سرکاری اور پرائیویٹ یونیورسٹیوں میں ڈگری سطح کی طبی تعلیم کا آغاز ہوچکا ہے جبکہ پانچ مزید یونیورسٹیوں میں ڈگری کلاسز منظوری کے مراحل میں ہیں- اسی طرح فاضل الطب والجراحت کی چار سالہ تعلیم تو دی جارہی تھی مگر اس تعلیم کو اکیڈمک تعلیم کے مساوی تسلیم نہیں کیاجاتا تھا اور نہ ہی طب کی تعلیم کو نیشنل سکیم آف سٹڈی کا حصہ بنایاگیا تھا – اس اہم امر کاادراک کرتے ہوئے پاکستان طبی کانفرنس کی قیادت کی جانب سے جنرل سیکرٹری پاکستان طبی کانفرنس پنجاب حکیم محمد احمد سلیمی کو یہ ذمہ داری تفویض کی گئی – انہوں نے 2015 ءمیں کونسل کا رکن بننے کے بعد اس کام کا آغاز کیا اورسابق صدر نیشنل کونسل فار طب پروفیسر ڈاکٹر ضابطہ خان شنواری کی قیادت میں سب سے پہلے فاضل الطب والجراحت کے پہلے دو سال کی سکیم آف سٹڈی تیار کی اور اس کو منظور کرایا – اس مقصد کیلئے قومی طبی کونسل کے صدر حکیم محمد احمد سلیمی نے وفاقی محتسب میں درخواست دائر کی ، جس پر وفاقی محتسب نے IBCCکی تجویز پر قومی نصاب کونسل (NCC)کو ہدایت جاری کہ طبی تعلیم فاضل الطب والجراحت کے پہلے اور دوسرے سال کو انٹرمیڈیٹ کے مساوی قرار دینے کیلئے اسے نیشنل سکیم آف سٹیڈی کا حصہ بنایا جائے۔
وفاقی محتسب کی ہدایت پر نیشنل کونسل فارطب، قومی نصاب کونسل، IBCC اور ماہرین تعلیم نے طبی تعلیم فاضل الطب والجراحت کے پہلے دوسال کی سکیم آف سٹیڈی تیار کی، جسے IBCC نے اپنے0 17ویں اجلاس میں باقاعدہ منظور کرلیا۔بعد ازاں منظور شدہ سکیم آف سٹیڈی کے مطابق نیشنل کونسل فارطب، قومی نصاب کونسل، فیڈرل بورڈ آف ایجوکیشن اور دیگر ماہرین تعلیم نے فاضل الطب والجراحت کے پہلے دوسال کا نصاب تشکیل دیا، جس کی منظوری کا باقاعدہ نوٹیفیکیشن قومی نصاب کونسل (NCC) نے جاری کردیاہے۔
اب فاضل الطب والجراحت کے سال اوّل اور سال دوم کے منظورشدہ نصاب کے مطابق فیڈرل بورڈوفاقی وزارت تعلیم حکومت پاکستان امتحان لے گا۔ پہلے دو سال کا امتحان پاس کرنے کے بعد طبیہ کالجز کے طالبعلم اگلے دو سال کی تعلیم مکمل کرکے فاضل الطب والجراحت کی تعلیم مکمل کریں گے اس کے علاوہ بی ای ایم ایس یا دیگر بی ایس پروگرام کے سال اول میں داخلہ کے لیے اہل ہونگے-
یاد رہے پہلے سے فارغ التحصیل اطباءکرام کی تعلیم کو بھی انٹرمیڈیٹ کی تعلیم کے مساوی قراردلانے کیلئے نیشنل کونسل فارطب کی جانب سے IBCC کو خط تحریر کردیا گیا ہے،جس کی روشنی میں IBCCاپنے آئندہ اجلاس میں اس کی منظوری دے گی۔
اس تاریخ ساز کارنامے میں پاکستان طبی کانفرنس کے صدر اقبال احمد قرشی کی خصوصی دلچسپی اور سرپرستی شامل رہی ۔ ان کے مالی تعاون کے نتیجے میں سکیم آف سٹیڈی اور نصاب تعلیم کی ورکشاپس کا انعقاد ممکن ہوا۔ اس کے علاوہ پاکستان طبی کانفرنس کے سینئر نائب صدر ڈاکٹر زاہد اشرف، مرکزی سیکرٹری جنرل پروفیسر حکیم منصوالعزیز کی معاونت اور رہنمائی کا اس عظیم مقصد کی تکمیل میں اہم کردار ہے ۔
اس اہم سنگ میل کو عبور کرنے میں سابق صدر نیشنل کونسل فارطب پروفیسر ڈاکٹر ضابطہ خان شنواری، موجودہ صدر حکیم محمد احمد سلیمی،نائب صدر حکیم سراج الدین چانڈیو، حکیم عبدالواحد شمسی، حکیم حافظ محمد یونس ؒ، حکیم حافظ فرید یونس و دیگراراکین نیشنل کونسل فارطب, رجسٹرار قومی طبی کونسل ڈاکٹر محمد اسماعیل، سپرنٹنڈنٹ محمد اشرف صدیقی اور دیگر اراکین کونسل کی خصوصی معاونت شامل رہی۔وائس پرنسپل جامعہ طبیہ اسلامیہ پروفیسر حکیم محمد اصغر، ماہر ین تعلیم ڈاکٹر محمد ادریس اورمحمد ناصر خان، قومی نصاب کونسل سے محترمہ صائمہ عباس اور فیڈرل بورڈ کی کنٹرولر ایجوکیشن محترمہ شفق کی کاوشیں اور معاونت بھی اس سلسلے میں لائق تحسین ہیں۔
پاکستان بھر کے اطباءکومبارک ہو کہ 1965 ءکے بعد یہ اہم سنگ میل عبور ہوا ہے ، ان شاءاللہ موجودہ طب کونسل کی جانب سے فاضل الطب والجراحت کے سال سوم اور سال چہارم کو ایسوسی ایٹ ڈگری کے مساوی قرار دلانے کے لیے کوشش کا آ غاز کردیا جائے گا- طب کا مستقبل روشن ہے ضرورت اس امر کی ہے کہ اطباءاپنی صفحوں میں اتحاد قائم کریں اوردرپیش نت نئے چیلنجز سے نبرد آزما ہونے کے لیے کمربستہ ہوجائیں – ان شاءاللہ طب یونانی اسلامی ترقی کرے گی اور دنیا کے مسائل صحت کو حل کرنے کے لیے اپنا بہترین کردار ادا کرے گی- حکیم ذوالفقار علی ملک(ترجمان نیشنل کونسل فارطب)

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں