262

طوفانی بارشوں کے سبب بلوچستان میں سب سےزیادہ تباہی ہوئی جس کے نتیجے میں 16 خواتین اور 13 بچوں سمیت 42 افراد سیلابی ریلوں اور مکانات گرنے سے ہلاک ہوگئے

ملک میں طوفانی بارشوں سےاموات کی تعداد 80 ہوگئی۔

مقامی انتظامیہ کے مطابق طوفانی بارشوں کے سبب بلوچستان میں سب سےزیادہ تباہی ہوئی جس کے نتیجے میں 16 خواتین اور 13 بچوں سمیت 42 افراد سیلابی ریلوں اور مکانات گرنے سے ہلاک ہوگئے۔

بلوچستان کے مختلف ڈیم اور نالوں میں طغیانی کے وجہ سیلابی صورت حال رہی جس کے باعث آبادیوں کو بری طرح نقصان پہنچا ،ہرنائی میں پہاڑوں سے آنے والا سیلابی ریلہ شہر میں داخل ہونے سے سڑکیں ندی نالوں کا منظر پیش کررہی ہیں۔

دوسری جانب غذر میں آسمانی بجلی گرنے اور لینڈ سلائیڈنگ سے جاں بحق افراد کی تعداد 8 ہوگئی۔

ادھر لاہورسمیت پنجاب کے مختلف شہروں میں بھی بارشیں ریکارڈ کی گئیں، گوجرانوالہ کے ڈی ایچ کیو اسپتال میں بارش کا پانی داخل ہوگیا جب کہ ملتان کےمختلف علاقوں میں درخت،بجلی کی تاریں گرنےکے واقعات بھی سامنے آئے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں